تری بربادیوں کے مشورے ہیں آسمانوں میں

سولہ کروڑ سے زائد مسلمانوں کا ملک پاکستان۔ مسلم دنیا کی واحد ایٹمی طاقت۔ کہتے ہیں کہ امریکہ کی ریاست فلوریڈا میں ایک مقامی پادری نے اعلان کیا ہے کہ 11 ستمبر کو اجتماعی طور پر نعوذ با اللہ قرآن کو جلانے کے دن کے طور پر منایا جائے گا اور حیرت انگیز طور پر پاکستانی ذرائع ابلاغ میں اس کا کوئی خاص چرچا نہیں ہے-

ابھی کچھ دنوں پہلےہمارے کرکٹ کے کھلاڑیوں نے ملک و قوم کی عزت کا جو سودا کیا تھا اس کے بارے میں میڈیا نے اتنا شور مچایا کہ حد کر دی۔ مگر قرآن کو جلانے کی ناپاک کوشش پر کوئی خاص بات نہیں ہو رہی۔ سوچنے کی بات ہے کہ یہ تضاد کیوں؟

کیا قرآن کی حرمت کی ہم پر کوئی ذمہ داری نہیں؟ یا ہم بھی اس امت کی طرح ہو گئے ہیں جس نے اپنے نبی سے کہا تھا کہ آپ اپنے اللہ کے ساتھ جا کے خود جہاد کریں؟

کیا حکومت پاکستان کی کوئی ذمہ داری نہیں تھی کے وہ اپنے آقاؤں سے احتجاج کرتے؟ مگر جس قوم کا ضمیر مردو ہو گیا ہو ان پر بد تریں حکمراں ہی مسلط کیے جاتے ہیں۔

Advertisements
شائع کردہ از پاکستان, اسلام | ٹیگ شدہ , , | تبصرہ چھوڑیں

پاکستان میں حسب سابق دو عیدیں- کیا قومی اتفاق رائے ممکن ہے؟

حسب سابق اس دفعہ بھی پاکستاں میں دو عیدیں ہوں گی۔ آخر خیبر  پختون خواہ میں بعض لوگ چاند کو ایک دن پہلے کیسے دیکھ لیتے ہیں آج تک کسی کی سمجھ نہیں آیا۔ جب ہم لوگ پورے ملک میں عید ایک ساتھ نہیں منا سکتے تو ملک کے دیگر بحرانی مسائل پر کس طرح اتفاق رائے پیدا کیا جا سکتا ہے-

ہمارے سیاستدان ریاست کو بحرانی کیفیت سے نکالنے کی بجائے ٹی وی پروگراموں میں ایک دوسرے کو گالیاں دیتے ںظر آتے ہیں۔ انھیں اس بات کا بھی اندازہ نہیں کے ان کو زیادہ تر پروگراموں کو چٹپٹا بنانے کے لیے بلایا جاتا ہے- ٹی وی اینکرز ان سے کھیلتے ہیں اور ہمارے "مدبر سیاستدان” اس بات پر خوش ہوتے ہیں کہ انھوں نے اپنے مخالف کو چت کر دیا-

اقبال نے کیا خوب کہا ہے

یہ ڈرامہ دکھائے گا کیا سین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پردہ اٹھنے کی دیر ہے باقی

شائع کردہ از پاکستان | ٹیگ شدہ | تبصرہ چھوڑیں